بڑھتے ھوئے سی این جی سٹیشن اور گیس کی لوڈ شیڈنگ

پاکستان میں موسم سرما میں قدرتی گیس کے استعمال اور پیدوار میں آٹھ سو ملین کیوبک فٹ گیس یومیہ کا فرق پڑ جاتا ہے جسے اس سال گیس کی باضابطہ لوڈشیڈنگ کے ذریعے پورا کیا جارہا ہے۔پاکستان میں قدرتی گیس کی یومیہ پیداوار ساڑھے تین ارب کیوبک فٹ ہے۔سوئی ناردرن گیس کا کہنا ہے کہ گیس کے استعمال میں موسم سرما کے دوران ہونے والے اضافے کو لوڈشیڈنگ کے ذریعے ہی پورا کیا جا سکتا ہے۔ویسے تو سی این جی سٹیشنز صنعت کے تیس فیصد حصے کے مقابلے میں دس فیصد سے بھی کم گیس استعمال کرتے ہیں لیکن شہری علاقوں میں ہونے کے باعث سی این جی سٹیشنز گھریلو صارفین کے لیے بچھائے گئے پائپ سے گیس استعمال کرتے ہیں جس سے گھروں کو گیس کی فراہمی متاثر ہوتی ہے۔گیس فراہم کرنے والے پائپ لائنز میں کم دباؤ کے باعث فراہمی میں خلل پڑتا رہا ہے۔ ماہرین کے مطابق یہ مسئلہ سی این جی سٹیشنز کے باعث پیدا ہوتا ہے۔جس دن سی این جی کی گیس فراھمی بند ھونے کا اعلان بھی ھو،پھر بھی گیس گاڑیوں میں بھرائی جا رھی ھوتی ھے جو رشوت دے کر بھری جاتی ھے اور گھروں کو یس دن بھی نہیں ملتی۔سردی میں نہ تو ھیٹر ھے اور نہ کھانا بن پاتا ھے۔تندور والوں کے نخرے آسمانوں کو چھؤ رھے ھیں۔

Advertisements
This entry was posted in creative. Bookmark the permalink.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s